”ایک ہفتے میں مطالبات نہ مانے تو23 نومبر کو پنجاب بھر میں آٹے کی سپلائی بند “ فلور ملز ایسوسی ایشن نے دھمکی دے دی

”ایک ہفتے میں مطالبات نہ مانے تو23 نومبر کو پنجاب بھر میں آٹے کی سپلائی بند “ …

لاہور( ڈیلی پاکستان آن لائن )پنجاب فلور ملز ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ ایک ہفتے میں  بیرونی اضلاع سے 25 فیصد کوٹہ اٹھانے کی شق ختم کئے جانے سمیت تمام مطالبات نہ مانے گئے تو 23 نومبر کو پنجاب بھر میں سرکاری اور پرائیویٹ آٹے کی سپلائی بند کر دی جائے گی ۔

گروپ لیڈر عاصم رضا احمد اورپنجاب کے چیئرمین  ملک طاہر حنیف نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ فلورملنگ انڈسٹری کو گندم ریلیز پالیسی پر شدید تحفظات ہیں ،محکمہ خوراک کے اقدامات سے انڈسٹری میں بے چینی بڑھ گئی،کم سرکاری کوٹہ کے سبب سرکاری آٹاکی دستیابی متاثر ہو رہی ہے اور اوپن مارکیٹ آٹے کی قلت کی وجہ سے بحران کا شکار ہے، ڈائریکٹر خوراک پنجاب اپنے دعووں سے مکر گئے، جو وعدے کیے وہ بھول گئے جس سے فلور ملنگ انڈسٹریز مسائل کا شکار ہے ۔

انہوں نے کہا کہ گندم کوٹہ کم از کم 25 بوری کیا جائے،بیرونی اضلاع سے 25 فیصد کوٹہ اٹھانے کی شق ختم کی جائے ،گندم گرائنڈنگ چارجز پر نظر ثانی کی جائے ،خیبرپختونخواہ اور دیگر صوبوں کو سفید تھیلا میں آٹا ترسیل کی اجازت دی جائے ،مطالبات تسلیم نہ ہوئے توفلور ملز سرکاری گندم کوٹہ نہیں اٹھائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک پنجاب کے پاس گندم سرپلس ہے مگر سیکرٹری خوراک پنجاب اور ڈائریکٹر خوراک پنجاب کنفیوژن کا شکار ہیں ۔انہوں نے خبردار کیا کہ ایک ہفتے کا وقت اس لیے دیا گیا ہے تاکہ حکومت اپنا کام کر سکے ورنہ 23 نومبرکو پنجاب بھر میں آٹے کی سپلائی بند کر دی جائے گی۔

مزید :

علاقائیپنجابلاہور




Source link

About Daily Multan

Check Also

محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر کے زیرِ اہتمام کانفرنس ، دوسرے سیشن میں قومی صحت کارڈ پر تبادلہ خیال

محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر کے زیرِ اہتمام کانفرنس ، دوسرے سیشن میں قومی صحت … …

Leave a Reply

Your email address will not be published.