سر وسز ہسپتال میں مریض کی موت کے حوالے سے ابتدائی رپورٹ تیار ،ذمہ دار ڈاکٹرز کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی کی سفارش

سر وسز ہسپتال میں مریض کی موت کے حوالے سے ابتدائی رپورٹ تیار ،ذمہ دار ڈاکٹرز …

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سروسز ہسپتال میں ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے مریض کی ہلاکت کے معاملے پر اہم پیشرفت سامنے آئی ہے،مریض کی موت کے حوالے سے ابتدائی رپورٹ تیار کرلی گئی جس میں ڈاکٹروں کو قصوروار قرار دیا گیا ہے۔

 نجی  ٹی وی  کے مطابق رپورٹ میں ہسپتال کے چار ڈاکٹرز ڈاکٹر سلمان حسیب، ڈاکٹر عمران بھٹی، ڈاکٹر محمود الحسن اور ڈاکٹر سلمان سرور کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔ایم ایس سروسز ہسپتال ڈاکٹر احتشام نے واقعہ کی انکوائری رپورٹ سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کو بھجوا دی۔ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ مریض پانچ بج کر 52 منٹ پر اپنے پاوں پرہسپتال آیا، چھ  بجکر 43 منٹ پر مریض کے ڈیتھ سرٹیفکیٹ پر ریسیو ڈیتھ لکھ دیا گیا۔ابتدائی رپورٹ کے مطابق مریض کی ڈیتھ کے بعد ینگ ڈاکٹرز نے ایمرجنسی بند کردی۔ ایم ایس سروس ہسپتال کا کہنا ہے کہ مریض کی ہلاکت کی ذمہ داری ڈاکٹرز پر عائد ہوتی ہے۔

یاد  رہے  کہ  لاہور کے سروسز ہسپتال میں خود چل کر آنے والا مریض مردہ قرار دےد یا گیا تھا، ایمرجنسی وارڈ میں 30 سالہ حامد ایک گھنٹے ڈاکٹرز کا انتظار کرتا رہا، گردے میں تکلیف میں مبتلانوجوان بروقت علاج نہ ہونے پر زندگی ہارگیا،ہسپتال انتظامیہ نے اپنی غفلت چھپانے کے لیے ڈیتھ سرٹیفکیٹ پر لکھا کہ حامد کو مردہ حالت میں ہسپتال لایا گیا تھا۔میڈیا  پر سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آنے کےبعدڈاکٹرز  کےجھوٹ  کا بھانڈا پھوٹ گیا  تھا۔لواحقین کا کہنا تھا کہ 30 سالہ حامدکو گزشتہ رات طبیعت خراب ہونےپر ہسپتال لائے، حامد میڈیکل ایمرجنسی میں زیرعلاج تھا جبکہ ڈاکٹرز  کی جانب سے علاج میں غفلت برتی گئی،ڈاکٹرز کی مبینہ غفلت سے نوجوان  حامدکے جاں بحق  ہونےپرلواحقین نےسروسز ہسپتال کے سامنے شدید احتجاج  کیا، اس  موقع  پرپولیس ہاتھا پائی جبکہ متعدد مظاہرین کو حراست میں لے لیا گیا  تھا۔

مزید :

علاقائیپنجابلاہور




Source link

About Daily Multan

Check Also

فیصل آباد میں شادی سے انکار پر لڑکی کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا دیا گیا

فیصل آباد میں شادی سے انکار پر لڑکی کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا دیا …

Leave a Reply

Your email address will not be published.