عدم اعتماد، سپریم کورٹ میں ممکنہ تصادم روکنے کیلئے درخواست سماعت کیلئے مقرر


سپریم کورٹ آف پاکستان نے وزیرِ اعظم عمران خان کے خلاف تحریکِ عدم اعتماد کے معاملے پر سیاسی جماعتوں کے درمیان تصادم کے ممکنہ خطرے پر سپریم کورٹ بار کی درخواست سماعت کے لیے مقرر کر دی۔

تصادم کے ممکنہ خطرے پر سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن نے آئینی درخواست سپریم کورٹ آف پاکستان میں دائر کی تھی۔

عدالتِ عظمیٰ میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی درخواست پر سماعت اب سے کچھ دیر بعد ہو گی۔

سپریم کورٹ کی جانب سے پہلے یہ درخواست پیر کو سماعت کے لیے مقرر کی گئی تھی۔

اس حوالے سے عدالتِ عظمیٰ کی جانب سے اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کر دیا گیا ہے۔

سپریم کورٹ نے آئی جی اسلام آباد پولیس کو بھی ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کی ہدایت کی ہے۔

درخواست میں وزیرِ اعظم عمران خان، اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، وزارتِ داخلہ، وزارتِ دفاع، آئی جی اسلام آباد اور ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کو فریق بنایا گیا ہے۔

سپریم کورٹ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ سندھ ہاؤس پر حملے کے بعد یہ درخواست آج ہی سماعت کے لیے مقرر کر دی گئی ہے۔

ترجمان سپریم کورٹ نے بتایا ہے کہ سوموٹو نہیں لیا گیا ہے، 2 رکنی بنچ احسن بھون کی پٹیشن پر سماعت کرے گا۔

سپریم کورٹ کے ترجمان کا یہ بھی کہنا ہے کہ پٹیشن سیاسی جماعتوں کو تحریکِ عدم اعتماد پر ووٹنگ سے قبل اسلام آباد میں جلسے سے روکنے سے متعلق ہے۔

واضح رہے کہ حکمراں جماعت پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے کارکنوں نے گزشتہ روز اسلام آباد میں سندھ ہاؤس پر دھاوا بول دیا اور گیٹ توڑ کر اندر داخل ہو گئے۔

پی ٹی آئی کارکنان نے ہاتھوں میں لوٹے اورڈنڈے اٹھا رکھے تھے، انہوں نے منحرف ارکان اور حزبِ اختلاف کے خلاف جبکہ وزیرِ اعظم عمران خان کے حق میں نعرے لگائے۔

اسلام آباد پولیس کی بھاری نفری سندھ ہاؤس کے باہر پہنچ گئی جس نے پی ٹی آئی کارکنوں کو واپس جانے کی ہدایت کی۔

اس دوران پی ٹی آئی کارکنوں نے اسلام آباد پولیس کے ایس پی سے تلخ کلامی کی اور سندھ ہاؤس کے باہر سے واپس جانے سے انکار کر دیا۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ پارٹی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑنے والے اراکین اپنی سیٹوں سے استعفیٰ دیں۔

اس دوران پی ٹی آئی کے کارکنان مشتعل ہو گئے جو سندھ ہاؤس کا گیٹ توڑ کر اندر داخل ہو گئے اور نعرے بازی کی۔

پولیس نے تحریکِ انصاف کے 2 ارکانِ قومی اسمبلی فہیم خان اور عطاء اللّٰہ نیازی سمیت 12 افراد کو گرفتار کر لیا جنہیں بعد ازاں شخصی ضمانت پر رہا کر دیا گیا۔

دوسری جانب پی ٹی آئی کارکنوں نے پشاور، لاہور، فیصل آباد اور نارووال میں بھی منحرف ارکانِ قومی اسمبلی کے خلاف مظاہرے کیے۔

’’یہ ٹریلر ہے، فلم ابھی باقی ہے‘‘

سندھ ہاؤس پر دھاوا بولنے والے پی ٹی آئی رکنِ قومی اسمبلی فہیم خان نے کہا ہے کہ یہ ٹریلر ہے، فلم ابھی باقی ہے۔

واقعے پر وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ سندھ ہاؤس کو نیا چھانگا مانگا بنائیں گے تو عوام کی نفرت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ لوٹوں کو کہیں اور شفٹ کر لیں ورنہ پورا مہینہ تماشہ لگا رہے گا، ہم کس کس کو روکیں گے۔

’’نہ کوئی ووٹ خرید رہا ہے اور نہ کوئی بیچ رہا ہے‘‘

مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت کا کہنا ہے کہ یہ عدم اعتماد کی پہلی تحریک ہے جس میں نہ کوئی ووٹ خرید رہا ہے اور نہ کوئی ووٹ بیچ رہا ہے، یہ محض پروپیگنڈا ہے۔

انہوں نے اپیل کی ہے کہ حکومت اور اپوزیشن دونوں جلسے ملتوی کر دیں، کوئی مرگیا یا مروا دیا گیا تو سب پچھتائیں گے۔




Source link

About Daily Multan

Check Also

پیپلز پارٹی کے یوم تاسیس کا جلسہ آج کراچی میں ہوگا

پاکستان پیپلز پارٹی کے یوم تاسیس کا مرکزی جلسہ آج نشتر پارک کراچی میں ہوگا۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *