لاہور میں ایڈز کے مریض نے بیوی کے ساتھ مل کر ایسا کام کردیا کہ آپ بھی داد دیں گے

لاہور میں ایڈز کے مریض نے بیوی کے ساتھ مل کر ایسا کام کردیا کہ آپ بھی داد دیں …

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ایچ آئی وی اور ایڈز کے متعلق بات کرنا پاکستانی معاشرے میں کجا، پوری دنیا میں شجرممنوعہ سمجھا جاتا ہے۔ اس مرض میں مبتلا ہونے والے لوگ سماج میں تج دیئے جانے کے خوف سے چپ سادھ لیتے ہیں، تاہم لاہور کے ایک ایچ آئی وی مریض نے اب یہ چپ توڑ دی ہے اور اپنی بیوی کے ہمراہ اس مرض کے متعلق آگہی پھیلانے کا بیڑہ اٹھا لیا ہے۔

ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق اس 43سالہ آدمی کانام عاصم اشرف ہے جو اپنی 45سالہ اہلیہ روبینہ کے ساتھ مل کر ایچ آئی وی اور ایڈز کے متعلق آگہی پھیلانے کا کام کر رہا ہے۔ اشرف ایک کباڑ خانے میں کام کرتا تھا۔ 1998ءمیں وہ حج کے لیے سعودی عرب جانے لگا اور اپنے ٹیسٹ کرائے تو اس میں ایچ آئی وی کی تشخیص ہو گئی۔ وہ گزشتہ 18سال سے اس وائرس کے ساتھ زندہ ہے۔

رپورٹ کے مطابق عاصم اشرف کی دو بیٹیاں بھی ہیں اور اس کی دونوں بیٹیاں اور بیوی اس وائرس سے متاثر نہیں ہیں۔ ورلڈ ایڈز ڈے کے موقع پر انادولو ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے روبینہ کا کہنا تھا کہ ”ایچ آئی وی کے شکار عاصم کے ساتھ شادی کرنا میری زندگی کا بہترین فیصلہ تھا۔ میں ایک برسرروزگار اورخودمختار خاتون تھی اور سوچ رکھا تھا کہ میں کبھی شادی نہیں کروں گی۔ تاہم جب میں نے عاصم کو دوسروں کے لیے کام کرتے دیکھا تو میں نے فیصلہ کر لیا کہ میں اپنی زندگی اس آدمی کے لیے وقف کر دوں گی چنانچہ میں نے خود عاصم کو پرپوز کیا۔ہمیں کورٹ میرج کرنی پڑی تھی کیونکہ میری فیملی اس شادی پر رضامند نہیں تھی۔ تاہم بعد میں انہوں نے اس شادی کو قبول کر لیا تھا۔“

اشرف کا کہنا تھا کہ ”جب مجھ میں ایچ آئی وی کی تشخیص ہوئی تو میں ایک بچے کی طرح خوفزدہ تھا۔ لوگ مجھ پر ہنستے تھے اور میرا تمسخر اڑاتے تھے۔ اس کی دوا بھارت سے درآمد کرنی پڑتی تھی اور ایک مریض کی ایک ماہ کی دوا 60سے 70ہزار روپے میں آتی تھی۔ میں نے دیگر ایچ آئی وی مریضوں کے ساتھ مل کر چندہ جمع کرنا شروع کیا اور بھارت سے دوا درآمد کرکے مریضوں کو دینی شروع کی۔ آج پاکستان میں اس کی دوا مفت ملتی ہے۔ “

مزید :

علاقائیپنجابلاہور




Source link

About Daily Multan

Check Also

دبئی میں ہونے والی لڑائی پاکستان میں ایک خاتون کے قتل کا سبب بن گئی

دبئی میں ہونے والی لڑائی پاکستان میں ایک خاتون کے قتل کا سبب بن گئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published.