مچھروں کی بہتات اور بیماریاں، سیلاب متاثرین پریشان


سندھ کے مختلف علاقوں میں مچھروں کی بہتات، مختلف بیماریاں اور کئی کئی فٹ کھڑا پانی سیلاب متاثرین کے لیے پریشانی کا باعث ہے۔

پڈعیدن، سانگھڑ، دادو، نوشہرو فیروز، ٹھری میر واہ اور خیرپور میں سیلابی پانی اب تک موجود ہے، لوگوں کے ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے کے لیے واحد سہارا صرف کشتی ہے۔

پانی مسلسل جمع رہنے کی وجہ سے گیسٹرو، ملیریا اور دیگر جلدی امراض میں اضافہ ہورہا ہے۔

ٹھٹھہ میں بھریا شیدی موری کے بند پر گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے سیلاب متاثرین کا ڈیرہ ہے، متاثرین کا کہنا ہے کہ اب تک سر چھپانے کے لیے خیمے اور نہ ہی پیٹ بھرنے کے لیے راشن ملا ہے۔




Source link

About Daily Multan

Check Also

پیپلز پارٹی کے یوم تاسیس کا جلسہ آج کراچی میں ہوگا

پاکستان پیپلز پارٹی کے یوم تاسیس کا مرکزی جلسہ آج نشتر پارک کراچی میں ہوگا۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *