پنجاب حکومت کا پی کے ایل آئی کو یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کیساتھ الحاق کر کے ٹیچنگ ہسپتال بنانے کا اعلان

پنجاب حکومت کا پی کے ایل آئی کو یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کیساتھ الحاق کر کے …

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) پنجاب حکومت نے پنجاب کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹیٹیوٹ ( پی کے ایل آئی ) کا الحاق یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے ساتھ  کر کے ٹیچنگ ہسپتال بنانے کا اعلان کر دیا۔

وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے  عطیہ کئے گئے گردوں اور جگر  کی ٹرانسپلانٹ کے بعد صحتیاب ہونے والے مریضوں کیساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ  ہمیں اعضاء عطیہ کرنے کا رجحان بڑھانا ہوگا۔ ایسی بہت سی مثالیں موجود ہیں  کہ کسی نے جگر  کا ٹکڑا یا گردہ عطیہ کر دیا مگر پہلی بار کسی ماں باپ نے اپنے بچے کے اعضاء عطیہ کئے ہیں ، اس کی کوئی مثال موجود نہیں ۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ پی کے ایل آئی کے ماضی کے حالات اور اب کے حالات سے عوام با خبر ہیں ، پی ٹی آئی حکومت کی کاوش سے  اب تک  پی کے ایل آئی میں  140 لیور ٹرانسپلانٹ ہو چکے ہیں جس میں  10 بچوں کے بھی لیور ٹرانسپلانٹ کئے گئے ہیں ۔ 231 سے زائد کڈنی ٹرانسپلانٹ کی جا چکی ہیں  جبکہ رواں برس پی کےایل آئی میں بون میروٹرانسپلانٹ شروع کررہےہیں۔

وزیر صحت پنجاب نے کہا کہ ڈائلسز گزشتہ برس تقریبا  58 ہزار ہوئے ، اب مزید ڈائلسز مشینیں بڑھائی جا رہی ہیں ۔  بون میرو ٹرانسپلانٹ شروع کئے جا رہا ہے  جس پر  کام شروع ہوچکا ہے ، انشاء اللہ سال 2022 میں بون میرو ٹرانسپلانٹ سمیت مزید سروسز بڑھائیں گے ۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے ابو ظہبی سے آنے والی ٹیم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جب وہاں سے  مریض کے گردے اور جگر نکالاگیا تو  بہت کم عرصے میں انہیں  جسم تک پہنچانا ہوتا ہے ، ہم پی کے ایل آئی میں مریضوں کو لٹاکر انتظار کر رہے تھے ،   دوسرے ملک سے سپیشل کنٹینر میں اعضاء رکھ کر جہاز کے ذریعے ساڑھے تین گھنٹے میں پہنچے ، میں نے خود ائیرپورٹ پر  ٹیم کو ریسیو کیا  اور پی کے ایل آئی میں ایک گھنٹے کے آپریشن میں اعضاء مریضوں میں ٹرانسپلانٹ کئے گئے ۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ پی کے ایل آئی کی گنجائش 467 بیڈز کی ہے جسے جولائی تک پوری طرح فعال کیا جا رہاہے ، آج  بورڈ کی میٹنگ میں اہم فیصلے کئے گئے جس میں سر فہرست پی کے ایل آئی کو ٹیچنگ ہسپتال بنانا  ہے کیوں کہ ایک پی کے ایل آئی آبادی کے مطابق کافی نہیں ، بلکہ  دیگر ہسپتالوں میں بھی لیور اینڈ کڈنی ٹرانسپلانٹ کی سہولیات دینا ہوں گی ، ہمیں یہاں سے لوگوں کو تربیت دینا ہو گی۔ 

انہوں نے نرسنگ کالج اور ٹیکنالوجی کا کالج بنایا جا رہا ہے جہاں سے 19 شعبہ جات میں سپیشیلٹی کرائی جائے گی ۔

مزید :

قومیتعلیم و صحتعلاقائیپنجاب




Source link

About Daily Multan

Check Also

شہبازگل کا معاملہ، آئی جی جیل خانہ جات کا وفاق سے تعاون کرنے کا فیصلہ، تحریک انصاف کو واضح کردیا، فواد چودھری کی تردید

شہبازگل کا معاملہ، آئی جی جیل خانہ جات کا وفاق سے تعاون کرنے کا فیصلہ، …

Leave a Reply

Your email address will not be published.